عید، کپڑے اور غریب

عید، کپڑے اور غریب

عید، کپڑے اور غریب 

Iss say Pocho kay meray bacho kay liya kapray laye? 
Dekho phir Eid Gareboo ko Satanay Aye 

اس سے پوچھو کہ میرے بچوں کے لئے کپڑے لائی؟
دیکھو پھر عید غریبوں کو ستانے آئی

غریب ماں، بچے اور عید

Ghareeb maan apne bachon ko bare pyar se yu’n manati hai 
Phir bana lain ge naye kapre yeh Eid to har saal ati hai 
غریب ماں اپنے بچوں کو بڑے پیار سے یوں مناتی ہے
پھر بنا لیں گے نئے کپڑے یہ عید تو ہر سال آتی ہے
Advertisements